شیخ رشید

اگر مجھے کسی نے تنگ نہ کیا تو اگلا الیکشن نہیں لڑوں گا،شیخ رشید

اسلام آباد(گلف آن لائن)وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید احمد نے واضح کیا ہے کہ اگر مجھے کسی نے تنگ نہ کیا تو اگلا الیکشن نہیں لڑوں گا، راولپنڈی میں نالہ لئی کی تعمیر ہوجائے تو ان کے سیاسی مقاصد مکمل ہو جائیں گے،وزارت داخلہ میں 3،3 لاکھ افراد کی ویزا درخواستیں پڑی ہوتی تھیں اب ہمارے پاس ایک ویزا بھی بیک لاک میں نہیں ،

ایک انٹرویو میں شیخ رشید احمد نے کہا کہ وزارت داخلہ ان کے لیے بہت چیلنج بھری وزارت ہے، اس میں تو ہر روز کوئی نہ کوئی واقعہ ہوتا ہے،ریلوے میں صرف ٹرین کا ہی حادثہ ہوتا تو بدنامی ہوتی تھی باقی تو نارمل وزارت تھی مگر یہاں 18 گھنٹے کام کرنا پڑتا ہے۔وزارت داخلہ سنبھالنے کے بعد اٹھائے گئے اقدامات کے حوالے سے شیخ رشید نے کہا کہ انہوں نے بیرون ملک سفارت خانوں میں 12، 14 سال سے بیٹھے نادرا کے سارے افسران کو تبدیل کردیا ہے تاکہ بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کی شکایات کا ازالہ ہو، اس کے علاوہ ویزا آن لائن کر دیا ہے، پہلے کوئی 70 ہزار روپے دیتا تھا اور ویزے کا ٹھپہ لگوا لیتا تھا،اب جو بھی آن لائن ویزا اپلائی کرتا ہے، اسے اسی وقت ویزا مل جاتا ہے، وزارت داخلہ میں 3،3 لاکھ افراد کی ویزا درخواستیں پڑی ہوتی تھیں اب ہمارے پاس ایک ویزا بھی بیک لاک میں نہیں ہے۔وفاقی وزیر نے کہا کہ راولپنڈی میں نالہ لئی کی تعمیر ہوجائے تو ان کے سیاسی مقاصد مکمل ہو جائیں گے،وہ چاہتے ہیں نالہ لئی پر ایک اتھارٹی بن جائے۔ انہوںنے کہاکہ اگر انہیں کسی نے تنگ نہ کیا تو اگلا الیکشن نہیں لڑیں گے۔

ابھی دو سال پڑے ہیں تاہم ان کا خیال یہی ہے کہ ریٹائر ہو جائیں، وہ 2018 کا الیکشن بھی میں نہیں لڑ رہے تھے تاہم جب نواز شریف نے یہ کہا کہ یہ (شیخ رشید) اگلی دفعہ اسمبلی میں نہیں ہوگا تو پھر انہیں مجبوراً اللہ کی مدد سے یہ لڑنا پڑ گیا۔وزیر داخلہ شیخ رشید نے اپنی کارکردگی سے متعلق بات کرتے ہوئے کہا کہ اسلام آباد سے ناکے ختم کروائے، 300 سے زائد سیکیورٹی کیمرے لگوائے اور ویزا آن لائن کیے۔انہوں نے بتایا کہ بیرون ملک میں موجود ہزاروں نادرا کے افسران کو تبدیل کیا تاکہ اوورسیز پاکستانیوں کے مسائل دور ہوں جبکہ ہم ہمارے پاس ویزے کا کوئی بیک لاگ نہیں ہے، ماضی میں یہاں تین لاکھ تک ویزے لگنے کے لیے پڑے ہوتے تھے۔

انہوں نے بتایا کہ جب میں نے وزارت داخلہ کا قلمدان سنبھالا تب 80 ہزار تک ویزا بیک لاگ میں تھے جنہیں ختم کروایا، ویزا آن لائن ہونے کی وجہ سے رشوت کے تمام راستے رک گئے ورنہ لوگ ویزا حاصل کرنے کے لیے 70 ہزار روپے رشوت دیتے تھے۔شیخ رشید نے کہا کہ اگر ویزا نہ ملے تو 90 دن کے اندر وزارت داخلہ کے پاس کلیئرنس کیلئے آتا ہے اس کے بعد ایجنسیاں ایک ماہ کے اندر تفتیش کی پابند ہیں اگر وہ ایسا نہیں کرتی تو ہم ویزا جاری کردیتے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں