ٹیکسز کابوجھ

350نہیں600ارب سے زائد کے ٹیکسز کابوجھ ڈالاجائے گا ‘ مرکزی صدر انجمن تاجران

لاہور(گلف آن لائن)آل پاکستان انجمن تاجران کے مرکزی صدراشرف بھٹی نے کہا ہے کہ حکومت کی جانب سے منی بجٹ کے اعلان پر کاروباری طبقے اور عوام میں شدید بے چینی پائی جاتی ہے ،حکومت کی روایت رہی ہے وہ جس اقدام کو اٹھانے سے انکاری ہوتی ہے اسے ہر صورت کرتی ہے،اطلاعات کے مطابق منی بجٹ میں350نہیںبلکہ 600ارب سے زائد کے ٹیکسز کابوجھ ڈالاجائے گا ۔ اپنے بیان میں انہوںنے کہا کہ پاکستان کی معیشت اس وقت سسکیاںلے رہی ہے لیکن حکمران پھر بھی سب اچھا کی رپورٹ دے رہے ہیں۔

منی بجٹ آنے کا سن کو کاروباری طبقہ اور عوام شدید پریشان ہیں اوران میںمہنگائی بڑھنے کے حوالے سے بے چینی پائی جاتی ہے ۔انہوںنے کہا کہ حکومت نے جب مالی سال کا بجٹ پیش کیا تھا تودعویٰ کیا گیا تھاکہ کوئی منی بجٹ نہیں آئے گا لیکن چھ ماہ میں کئی مرتبہ غیر اعلانیہ منی بجٹ آ چکے ہیں اوراب حکومت اعلانیہ منی بجٹ پیش کرنے جارہی ہے اورہماری معیشت اس کا بوجھ برداشت نہیں کر سکے گی ۔انہوں نے کہا کہ تذبذب کی صورتحال کی وجہ سے سرمایہ کاروںنے مزید سرمایہ کاری روک دی ہے جس کی وجہ سے کاروباری سرگرمیاں مانند پڑناشروع ہو گئی ہیں او راس کے مجموعی طور پر معیشت پر منفی اثرات مرتب ہورہے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں