شہباز شریف ،حمزہ شہباز

بینکنگ جرائم کورٹ کی ایف آئی اے کوشہباز،حمزہ کے مقدمے میں چالان جمع کرانے کی ہدایت

لاہور( گلف آن لائن)لاہور کی بینکنگ جرائم کورٹ نے ایف آئی اے کو مسلم لیگ (ن)کے صدرشہباز شریف اور پنجاب اسمبلی میں قائد حزب اختلاف حمزہ شہباز کے خلاف منی لانڈرنگ اور مالیاتی سکینڈل کے مقدمے میں چالان جمع کرانے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا ہے کہ آپ عدالت کو گمراہ کر رہے ہیں، گزشتہ حکم کے تحت چالان تو یہاں بینکنگ کورٹ میں جمع ہونا تھا،پہلے چالان لائیں پھر دائرہ اختیار پر فیصلہ کرائیں۔

بینکنگ جرائم کورٹ کے جج نے منی لانڈرنگ کے مقدمے میں شہباز شریف اور حمزہ شہباز کی ضمانت قبل از گرفتاری پر سماعت کی ۔شہباز شریف اور حمزہ شہباز اپنے وکلاء کے ہمراہ عدالت میں پیش ہوئے۔فاضل عدالت نے حاضری کے بعد شہباز شریف اور حمزہ شہباز کو جانے کی اجازت دے دی۔ایف آئی اے کے وکیل نے عدالت کو بتایا کہ چالان مکمل کر لیا ہے جوسپیشل کورٹ سینٹرل میں جمع کرا دیں گے۔بینکنگ کورٹ کے جج نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ گزشتہ حکم کے تحت چالان تو یہاں بینکنگ کورٹ میں جمع ہونا تھا۔ایف آئی اے کے وکیل نے کہا کہ ہمارا اس عدالت پر اعتراض ہے کہ یہ کیس نہیں سن سکتی۔

فاضل جج نے برہمی کااظہار کرتے ہوئے کہا کہ دائرہ اختیار کا معاملہ طے نہیں ہوا، ایف آئی نے خود کیسے طے کر لیا؟ آپ عدالت کو گمراہ کر رہے ہیں، یہ اعتراض عدالت نے قانون کے مطابق حل کرنا ہے ،پہلے چالان لائیں پھر دائرہ اختیار پر فیصلہ کرائیں۔فاضل جج نے سماعت کچھ دیر کے لیے ملتوی کردی ۔دوبارہ سماعت شروع ہونے پر ایف آئی اے کے وکیل نے کہا کہ ہمارے پاس چالان کی کاپی موجود ہے ہم یہاں چالان آج ہی جمع کرا دیتے ہیں، 7 والیمز پر مشتمل عبوری چالان تیار ہے، مگر ایف آئی اے بورڈ نے چالان سپیشل جج سینٹرل کے پاس جمع کرانے کی ہدایت کی ہے۔فاضل جج نے حکم دیتے ہوئے کہا کہ یہ ہدایات تو عدالت کے حکم کے خلاف ہیں، پہلے اصل چالان اس عدالت میں جمع کرائیں۔

فاضل عدالت نے شہباز شریف اور حمزہ شہباز شریف کی عبوری ضمانت میں 16 دسمبر تک توسیع کرتے ہوئے سماعت ملتوی کر دی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں