اقوا م متحدہ

اقوا م متحدہ کا ایتھوپیا میں علیحدگی پسندوں کے خلاف فوجی کارروائی پر انتباہ

نیویارک( گلف آن لائن)اقوام متحدہ نے کہاہے کہ شمالی ایتھوپیا میں تیگرائے کے علیحدگی پسندوں اور ان کے خلاف فوجی کارروائی نے علاقے میں شدید بحرانی صورت حال پیدا کر رکھی ہے۔میڈیارپورٹس کے مطابق ایک بیان میں اقوام متحدہ نے خبردار کیا کہ ایتھوپیا میں تیگرائے تنازعے نے ملک کے شمالی حصے میں عام افراد کی زندگیوں کو شدید پریشانی میں مبتلا کر دیا ۔ شمالی ایتھوپیا میں خوراک کے گوداموں کو لوٹنے کے بعد اس حصے میں کھانے پینے کے سامان کی شدید قلت پیدا ہونے کا قوی امکان ہے۔یہ بھی واضح کیا گیا کہ شمالی ایتھوپیا میں چورانوے لاکھ افراد کو کھانے پینے کی امداد کی اشد ضرورت ہے۔

دوسری جانب تیگرائے تنازعے کی شدت میں کوئی کمی واقع نہیں ہوئی ۔ایتھوپیا کے تیگرائے علاقے میں انسانی بحران ہر گزرتے دن کے ساتھ گہرا ہوتا جا رہا ہے۔ اس علاقے میں باون لاکھ افراد کو امداد کی ضرورت ہے۔ ان کے علاوہ آفار میں پانچ لاکھ چونتیس ہزار اور امہارا میں تینتیس لاکھ افراد امداد کے منتظر ہیں۔ آفار اور امہارا کے علاقے تیگرائے کے نزدیک واقع ہیں اور مسلح تنازعے نے ان میں بھی معمولات زندگی کو شدید متاثر کر رکھا ہے۔

ابھی تک امداد کے منتظر ان افراد کے لیے امدادی سامان کی ترسیل کی کوئی صورت سامنے نہیں آئی ،اقوام متحدہ کے ترجمان اسٹیفنی دوجارک کے مطابق کومبولچا کے گودام کو لوٹنے میں تیگرائے علیحدگی پسندوں کے ساتھ چند مقامی افراد بھی شامل تھے۔ دوجارک کے مطابق لٹیرے گودام سے بچوں کی کم خوراکی کی اشیا اور ادویات بھی چوری کر کے لے گئے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں