شہباز شریف ،حمزہ شہباز

شہباز شریف خاندان کے خلاف منی لانڈرنگ کے مقدمے میں اہم انکشافات

لاہور(گلف آن لائن)شہباز شریف خاندان کے خلاف منی لانڈرنگ کے مقدمے میں اہم انکشافات سامنے آئے ہیں،شریف خاندان کی ملکیتی رمضان شوگر کے 10 کم تنخواہوں والے ملازمین کے اکائونٹس میں 7ہزار 404ملین روپے موصول ہوئے۔نجی ٹی وی کے مطابق ایف آئی اے کی جانب سے شہباز شریف خاندان کے خلاف منی لانڈرنگ کے مقدمات میں عدالت میں جمع کرائی گئی دستاویزات کے مطابق شریف خاندان کی ملکیتی رمضان شوگر ملز کے 10 ملازمین کے اکائونٹس میں 7ہزار 404ملین موصول ہوئے۔

فیکٹری کے چپڑاسی ملک مقصود کے اکائونٹس میں 3 برسوں کے دوران 771 ملین روپے،کیشئر محمد اسلم کے اکائونٹ میں 1781ملین روپے موصول ہوئے۔دستاویزات کے مطابق رمضان شوگر ملز کے کلرک اظہرعباس کے اکائونٹ میں 480ملین روپے،کلرک خضرحیات کے اکائونٹ میں 1425 ملین روپے،اسٹورکیپرغلام شبیر کے اکائونٹ میں 434 ملین روپے موصول ہوئے جبکہ اسسٹنٹ اکائوٹنٹ محمد انوار کے اکائونٹ میں 883 ملین روپے جبکہ اسسٹنٹ منیجرظفر اقبال کے اکائونٹ میں 525ملین روپے موصول ہوئے۔

اسی طرح آئی ٹی آفیسر کاشف مجید کے اکائونٹ میں 362 ملین روپے جبکہ رمضان شوگر ملز کے پرانے ملازم مسرور انوار کے اکائونٹ مین231ملین روپے موصول ہوئے۔رپورٹ کے مطابق رمضان شوگر ملز کے ڈی ای او تنویر کے اکائونٹ میں512 ملین روپے موصول ہوئے۔ایف آئی اے کے مطابق تمام ملازمین کو شہباز شریف خاندان کے بے نامی داروں کے طور پر استعمال کیا گیا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں