سنجے دت

1993 ممبئی دھماکے، سبھاش گھائے نے سنجے دت کو بیگناہ قرار دیدیا

ممبئی (گلف آن لائن)نامور بھارتی فلم ساز سبھاش گھائے نے کہا ہے کہ 1993 میں ممبئی میں ہوئے بم دھماکوں میں معاونت کے الزام میں گرفتار ہونے والے سنجے دت بے گناہ تھے۔ خیال رہے کہ یہ اس وقت کی بات ہے جب سنجے دت اور سبھاش گھائے میں گہری دوستی تھی اور ان کی بلاک بسٹر فلم کھلنائیک ریلیز ہوئی تھی اور کامیابی کے جھنڈے گاڑ رہی تھی۔ ایک انٹرویو کے دوران سبھاش گھائے نے کہا کہ میں سنجے دت کو تب سے جانتا تھا جب وہ ایک بچہ تھا میں نے اس کی دوسری فلم ودھاتا کی بھی ہدایتکاری کی تھی اور اس فلم کے دس سال بعد میں نے اسے فلم کھلنائیک میں کاسٹ کیا تھا۔ فلم ساز نے کہا کہ میں بہت قریب سے سنجے دت کو جانتا تھا، جب وہ گرفتار ہوا تو میں جانتا تھا کہ وہ بے گناہ ہے اور اسے پھنسایا گیا ہے۔

فلم کھلنائیک اور اس کے مشہور زمانہ گیت ‘چولی کے پیچھے کیا ہے’ پر بات کرتے ہوئے سبھاش گھائے نے کہا کہ میں نے فلم کھلنائیک کی پروموشن پر ایک روپیہ خرچ نہیں کیا، میں خاموش رہا، ‘چولی کے پیھچے کیا ہے’ پر ایک ہنگامہ رہا، 32 سیاسی تنظیمیں میرے خلاف ہوگئیں، مجھ پر عدالت میں کیسز دائر ہوئے۔ اپنی بات کو جاری رکھتے ہوئے سبھاش گھائے نے کہا کہ لیکن میں خاموش رہا، میں جانتا تھا جو فلم میں نے بنائی، میں جانتا تھا جو سنجے دت ہے، میں جانتا تھا جو گیت میں ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں