فیاض الحسن

عمران خان کے جانے کے بعد اوورسیز پاکستانیوں نے روشن ڈیجیٹل اکائونٹس سے ٹریلین ڈالر واپس لے لئے ‘ فیاض الحسن

لاہور( گلف آن لائن)نامزد وزیراعلی پنجاب چودھری پرویز الٰہی کے ترجمان فیاض الحسن چوہان نے کہا ہے کہ عمران خان کے جانے کے بعد اوورسیز پاکستانیوں نے روشن ڈیجیٹل اکائونٹس سے ٹریلین ڈالر واپس لے لئے ہیں،مقصود چپڑاسی کے وزیر اعظم بننے سے عالمی سطح پر مسائل سامنے آ رہے ہیں،پی ٹی آئی کے کسی جلسہ میں پاک فوج کے بارے میں منفی معاملات سامنے نہیں آئیں گے،عمران خان کا کوئی بھی کارکن ایسا سوچ بھی سکتا، پی ٹی آئی کا عہدیدار ہونے کے ناطے نعروں کی مذمت کرتاہوں ،بلے کی سیٹ پر منتخب ہونے والا پی ٹی آئی کو ہی ووٹ دے گا ،اگر نہیں دے گا تو سپیکر کی جانب سے ان ووٹوں کو شمار نہیں کیاجائے گا،اتوار کی رات کو لاکھوں عوام عمران خان کی عزت کا پہرہ دینے کیلئے نکلے، ہمارے مخالفین بے غیرتی اورغلامی کا طوق پہن کر خوشیاں منا رہے ہیں ،سپیکر اور سیکرٹری اسمبلی نے کوئی غیر قانونی کام نہیں کیا، حمزہ شہباز نے ممبران کو گھوڑوں اور بکریوں کی طرح نجی ہوٹل میں رکھ کر باپ دادا کی روایت کو برقرار رکھتے ہوئے ہارس ٹریڈنگ کی۔

پنجاب اسمبلی کے احاطے میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے فیاض الحسن چوہان نے کہا کہ عوام عمران خان کو اپنا لیڈر مانتے ہیں، کتنی بدقسمتی ہے جمہوریت کا حسن دیکھیں 155والا اپوزیشن اور 85والا حکومت میں آ رہا ہے،شہبازشریف پر فرد جرم عائد ہونی تھی لیکن ایف آئی اے کو استعمال کرکے فائلیں سیدھی کی گئیں، یو ایس اے الائنس غلاموں ،بھکاریوں کا ٹولہ ہے ،اقتدار کے بعد کہتاہے ای وی ایم اور اوورسیز پاکستانیوں کے ووٹ کا حق واپس لے لیں، عمران خان کے جانے کے بعد اوورسیز پاکستانیوں نے روشن ڈیجیٹل اکائونٹس سے ٹریلین ڈالر واپس لے لئے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ دوست مزاری کیس ہائیکورٹ میں لے کر گئے ،حمزہ شہباز عدالت گئے کہ جلد اجلاس بلا کر اچکن پہنائی جائے ۔ انہوں نے کہا کہ سیکرٹری اسمبلی نے عدالت عالیہ کو بتایا ہے کہ یکم اپریل کو اجلاس بلایا ،دو اپریل کے اجلاس میں وزارت اعلی کے انتخاب کا مرحلہ شروع ہوا، حمزہ اور پرویز الٰہی کے کاغذات نامزدگی داخل ہوئے اور تین اپریل اجلاس پر سپیکر خود امیدوار تھے ،اسمبلی رولز 15کے تحت ڈپٹی سپیکر کو اختیارات دئیے گئے اورپھر اجلاس چلایاگیا، اجلاس میں (ن) لیگ کے مرد وخواتین ممبران نے بدمعاشی کی ،ڈپٹی سپیکر نے ہائوس کو ان آرڈر کرنے کی کوشش کی اور اجلاس چھ اپریل تک ملتوی کر دیاگیا ۔

انہوں نے کہا کہ تین اپریل کو اسمبلی ہال میں حمزہ شہباز عظمی اوررانا مشہود کی سرپرستی میں توڑ پھوڑ کی گئی ،فرنیچر شیشے توڑے گئے جس کے نتیجے میں ڈپٹی سپیکر نے اجلاس 16اپریل تک ملتوی کر دیا ،پانچ اور چھ اپریل کی رات کو خبر چلی ڈپٹی سپیکر نے گزیٹڈ نوٹیفکیشن کے بغیر اجلاس کیلئے آرڈر جاری کر دیا ،سپیکر نے رولز25کے تحت ڈپٹی سپیکر سے اختیارات واپس لے لئے، سادہ کاغذ پراجلاس کا کوئی نوٹیفکیشن اسمبلی تک نہیں پہنچا ،پرویز الٰہی نے ایک فیصد بھی کوئی غیر قانونی کام نہیں کیا، سپیکر اور سیکرٹری اسمبلی نے کوئی غیر قانونی کوئی کام نہیں کیا۔ انہوں نے کہا کہ (ن) لیگ ،بیگم صفدر اعوان اورحمزہ نجی ہوٹل پر بدنام ہوئے تو اراکین کو ائیر پورٹ پر ایک دوسرے ہوٹل میںشفٹ کر دیا گیا،عدالت عظمی اور عدالت عالیہ سے استدعا کرتا ہوں کہ جس طرح چھٹی کے دن عدالت کھل گئی، آئین کے آرٹیکل تریسٹھ کا جنازہ نکالا جارہاہے اس پر سوموٹو ایکشن لیں تاکہ عدلیہ عوام کے سامنے سرخرو ہو سکے۔

انہوں نے اسٹیبلشمنٹ کے خلاف نعرے لگنے کے حوالے سے کہا کہ پاک فوج ہماری شان ہے ،یہ بیرونی طاقتوں کی سازش ہے ، ایٹمی ملک کو اس وقت شکست نہیں دی جا سکتی جب تک عوام میں اختلاف نہ پیدا ہو جائے، پی ٹی آئی کا عہدیدار ہونے کے ناطے نعروں کی مذمت کرتاہوں ،عمران خان کا کوئی بھی کارکن ایسا سوچ بھی سکتا، پی ٹی آئی کے کسی جلسہ میں پاک فوج پر کوئی منفی معاملات سامنے نہیں آئیں گے۔ انہوں نے کہا کہ وفاق میں منحرف اراکین کو پیش نہیں کیا گیا کیونکہ انہیںمعلوم تھا تاحیات نااہل ہوں گے ،پنجاب میں بلے کی سیٹ پر منتخب ہونے والا پی ٹی آئی کو ہی ووٹ دے گا ،اگر نہیں دے گا تو سپیکر کی جانب سے ان ووٹوں کو شمار نہیں کیاجائے گا،دوسرے مرحلے میں جب و ووٹنگ ہوگی تو پرویز الٰہی ہی وزیر اعلیٰ بنیںگے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں