چیف الیکشن کمشنر

عدالت عالیہ کا 30 روز میں کیس نمٹانے کا حکمنامہ آیا ہے اس پر کیا کہیں گے، چیف الیکشن کمشنر کا پی ٹی آئی وکیل سے سوال

اسلام آباد (گلف آن لائن)چیف الیکشن کمشنر نے پی ٹی آئی فارن فنڈنگ کیس سوال کیا ہے کہ عدالت عالیہ کا 30 روز میں کیس نمٹانے کا حکمنامہ آیا ہے اس پر کیا کہیں گے جس پی ٹی آئی وکیل انور منصور نے کہا ہے کہ ہائیکورٹ نے جو آبزرویشنز دیں وہ بدقسمتی ہے، دلائل مکمل کرنے کے لیے تین دن مانگ لیے الیکشن کمیشن اگلے ہفتے مسلسل تین دن سماعت کریگا۔تفصیلات کے مطابق اسلام آباد ہائیکورٹ نے الیکشن کمیشن کو پی ٹی آئی فارن فنڈنگ کیس کا تیس روز میں فیصلہ کرنے کا حکم دیا ہے ۔

عدالت عالیہ کے حکمنامے کے بعد الیکشن کمیشن میں فارن فنڈنگ کیس کی سماعت۔ چیف الیکشن کمشنر سکندر سلطان راجہ کی سربراہی میں تین رکنی بنچ نے سماعت کی۔ دوران سماعت پی ٹی آئی وکیل انور منصور نے کمیشن پر اعتراض اٹھا دیااور کہاکہ الیکشن کمیشن اس وقت مکمل نہیں ہے،دو ممبران ابھی تک تعینات نہیں ہوسکے جس پر اکبر ایس بابر کے وکیل نے کہاکہ یہ اعتراض پہلے بھی اٹھایا گیا تھا تاہم اسے خارج کردیا گیا۔

چیف الیکشن کمشنر سکندر سلطان راجہ نے انور منصور سے استفسار کیا کہ 30 روز میں کیس کو نمٹانے کا عدالتی حکم ہے اس پر کیا کہیں گے جس پر انہوں نے جواب دیا کہ اسلام آباد ہائیکورٹ نے جو آبرزرویشنز دیں وہ بدقسمتی ہے جن باتوں پر دلائل نہیں دیے گئے وہ بھی حکمنامے میں شامل کر دی گئیں۔انہوں نے کہا کہ پولیٹیکل پارٹیز کو آرڈر کے تحت غیر ملکی کمپنیوں سے فنڈنگ کی اجازت ہے، ہر جگہ فارن فنڈنگ کا ذکر ہوتا ہے جبکہ کیس ممنوعہ فنڈنگ کا ہے ممنوعہ فنڈنگ ملک کے اندر سے بھی ہو سکتی ہے۔ سکروٹنی کمیٹی کے ٹی او آر غیرملکی فنڈنگ تک محدود تھے کمیٹی صرف الزامات کی روشنی میں فارن فنڈنگ کی تحقیقات کر سکتی تھی۔

وکیل انور منصور نے کہا کہ دلائل مکمل کرنے کیلئے تین درکار ہیں جس کے بعد الیکشن کمیشن نے سماعت ائندہ ہفتے تک ملتوی کردی۔ الیکشن کمیشن کے باہر گفتگو کرتے ہوئے درخواست گزار اکبر ایس بابر نے کہا کہ اسلام آباد ہائیکورٹ نے لکھا ہے کہ اگر ممنوعہ فنڈنگ ثابت ہوئی تو اس کے اثرات جماعت اور چیئرمین پی بھی پڑینگے اور یہ ثابت ہوچکا ہے کہ غیر ملکی اور ممنوعہ فنڈنگ ہوئی ہے ۔

اکبر ایس بابر نے کہا کہ عمران خان نے اب منترا شروع کیا کہ انہیں سیاست سے الگ کیا جارہا ہے جس منصف پر شکوک و شبہات کررہے ہیں ان کو خود ہی نامزد کیا تھا۔

اپنا تبصرہ بھیجیں