حافظ حمد اللہ

عمران خان لانگ مارچ کا شوق پورا کر لیں، اگر قانون کو ہاتھ میں لیا تو سختی سے نمٹیں گے’حافظ حمد اللہ

لاہور (گلف آن لائن) پی ڈی ایم کے ترجمان حافظ حمد اللہ نے کہاہے کہ عمران خان لانگ مارچ کا شوق پورا کر لیں، اگر قانون کو ہاتھ میں لیا تو سختی سے نمٹیں گے،اگر نواز شریف گرفتار ہو سکتے ہیں تو عمران خان بھی گرفتار ہو سکتے ہیں، آرمی چیف کی تعیناتی وقت کا وزیر اعظم کرے گا،الیکشن اگلے سال اکتوبر میں ہی ہوں گے۔

ان خیالات کااظہارنہوںنے ایجوکیشن یونیورسٹی ٹان شپ میں سیرت النبی کانفرنس میں شرکت کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ۔انہوںنے کہاکہ پی ڈی ایم نے اپنی سیاست دا ئو پر لگا کر ریاست کو بچایا، عمران خان نے اپنی ڈیڑھ انچ کی پارٹی کو بچانے کے لئے ریاست کے خلاف سازش کی، جو کہ آڈیو لیکس سے واضح ہو چکا ہے ۔

حافظ حمد اللہ نے عمران خان کو ملکی سیاست کے لئے کینسر کی بیماری قرار دیتے ہوئے کہا کہ ہمیں قبل از وقت الیکشن کروانے کی ڈکٹیشن مت دیں، الیکشن اگلے سال اکتوبر میں ہی ہوں گے۔ آری چیف کی تعیناتی کا اختیار آئین ہے مطابق وقت کے وزیر اعظم کو ہوتا ہے، شہباز شریف ہی آرمی چیف کی تعیناتی کریں گے۔ عمران خان پر اتنے کیسز ہیں تو ان کو کیوں گرفتار نہیں کیا جا سکتا، گرفتار ہوئے تو بلوچستان کی مچھ جیل میں رکھیں گے۔

عمران خان کا لانگ مارچ شارٹ ہو یا لانگ وہ ٹھس مارچ ہوگا۔انہوںنے کہاکہ عمران رجیم نے ملک پر منتخب حکومت نہ کی وہ منتخب وزیر اعظم نہیں بیساکھیوں پر آر ٹی ایس سسٹم سے ملک پر مسلط کیاگیا۔فضل الرحمن کہتے رہے پچیس جولائی رجیم اور عمران خان کو تسلیم نہیں کرتے ،عمران خان ملکی سالمیت و معیشت کے لئے خطرناک ثابت ہوگا پہلے کہہ دیا تھا۔چار سال پی ڈی ایم جماعتیں سڑکوں پر رہی جے یو آئی نے آزادی مارچ کیا آخر کار تحریک عدم اعتماد کے نتیجے میں قوم کو عمران رجیم سے چھٹکارا ملا،عمران خان کی خارجہ پالیسی میں ملک تنہا رہ گیا دوست ممالک کام کرنے کیلئے تیار نہیں تھے،سب سے بڑا بلنڈر آئی ایم ایف سے معاہدہ کرکے گورنرسٹیٹ بینک کو پاور فل بنایا کہ وہ حکومت کو جواب دہ نہیں تھا،عمران خان نے ملک کو آئی ایم ایف کے حوالے کیا ،عمران خان کو جب معلوم ہوا کہ حکومت چار ماہ بعد جانے والی ہے تو آئی ایم ایف معاہدے کو توڑا جس سے مہنگائی کا آج طوفان آیا ہے۔

پی ڈی ایم جماعتوں کے پاس ریاست یا سیاست کو بچانے کی آپشن بچی عمران خان نے ملک کی معیشت کو ڈبو دیا،عمران خان نے اپنی ڈیڑھ انچ کی سیاسی پارٹی کو بچانے کیلئے آئی ایم ایف کے معاہدوں کی خلاف ورزی کی، اگر ریاست نہ بچاتے تو ملک سری لنکا بن جاتا،پی ڈی ایم نے اپنی سیاست کو پائوں تلے روند کر ریاست کو سری لنکا بنانے سے بچا لیا یہی فرق ہے آج و عمران خان کی حکومت میں ہے ۔انہوںنے کہاکہ عمران خان نے ایک صفحہ لہراتے ہوئے کہاکہ امریکی سازش سے حکومت گرائی تو آڈیو لیکس میں عمران خان شاہ محمود قریشی اسد عمر آپس میں بیٹھ کر ریاست کے خلاف سازش کررہے ہیں ۔

لیٹر کے ذریعے ملک کے ساتھ کھیلنے کی بات کی قوم کے جذبات و معیشت سے کھیل رہے ہو،قومی سلامتی کمیٹی اجلاس میں فیصلہ ہوا آڈیو لیکس پر کمیٹی ہونی چاہیے کمیٹی تحقیقات کرے گی عمران خان شاہ محمود اسد عمر پرنسپل سیکرٹری سے بھی پوچھے گی ۔عمران خان نے سی پیک کے سیکریٹ کاغذات آئی ایم ایف کے حوالے کئے ۔عمران خان نے کہاکہ امریکہ نے سازش کی اگر امریکہ نے سازش کی تو امریکہ کا نام کیوں نہیں لینا تو لوگوں کو بے وقوف بناتے ہیں۔عمران خان سیاست میں کینسر کی بیماری اور ناسور ہے،عمران خان کی سیاست کا جنازہ نکالیں گے ۔

انہوںنے کہاکہ پنجاب اور کے پی کے میں حکومت پی ٹی آئی کی ہے دونوں اسمبلیوں کو تحلیل کردیں الیکشن خود بخود ہو جائیں گے۔حکومت فیصلہ کرچکی اکتوبر دو ہزار تئیس میں الیکشن ہوگا عمران خان کی کوئی حیثیت نہیں حکومت کو ڈکٹیٹ کرے۔آرمی چیف کی تعیناتی ملک کا وزیر اعظم کرے گا آپ نے باجوہ کو مدت ملازمت میں توسیع دی تب پی ڈی ایم سے پوچھا ہے آرمی رولز کے مطابق شہبازشریف تعیناتی کریں گے۔عمران خان کا لانگ مارچ شارٹ ہو یا لانگ ہو ٹھس ہوگا۔

عمران خان کو جلسے کا حق ہے وہ جلسیاں محفل موسیقی اور میوزیکل شو کرتے ہیں،اسلام آباد آ جائیں اگر عمران خان جلائو گھیرائو کریں گے تو قانون ان سے نمٹے گا۔انہوںنے کہاکہ ایوان وزیر اعظم میں حساس معاملات کے اجلاس ہوتے ہیں ،فارن وفود ، خارجہ پالیسی ، معاشی پالیسیاں ہوتی گفتگو غیر محفوظ ہے تو سالمیت کیلئے خطرناک ہے اس کا سدباب ہونا چاہئیے۔نوازشریف گرفتار ہو سکتا ہے تو فارن فنڈنگ کیس ، سائفر معاملہ ثابت ہوتا تو عمران خان کی گرفتاری میں کیا قباحت ہے۔مچھ جیل میں عمران خان کو رکھیں گے لیکن کھانے کے علاوہ ان کی کوئی پسندیدہ چیز نہیں دیں گے ۔

اپنا تبصرہ بھیجیں