شیری رحمن

ایشیائی ترقیاتی بینک کے مہنگائی کے بڑھتے تخمینوں کی پیشن گوئی حکومت کے لیے خطرے کی گھنٹی ہونی چاہیے، شیری رحمن

اسلام آباد(گلف آن لائن) پاکستان پیپلز پارٹی کی نائب صدر سینیٹر شیری رحمن نے کہاہے کہ ایشیائی ترقیاتی بینک کے مہنگائی کے بڑھتے تخمینوں کی پیشن گوئی حکومت کے لیے خطرے کی گھنٹی ہونی چاہیے، تباہی سرکار مہنگائی کیلئے”عالمی قیمتوں”کو ذمہ دار ٹھہراتی رہتی ہے، علاقائی افراطِ زر کے اعداد و شمار ایک مختلف کہانی سناتے ہے، یہ نوٹس لے کر سمجھتے ہیں سب ٹھیک ہے۔

اپنے بیان میں سینیٹر شیری رحمن نے کہاکہ پاکستان کی مہنگائی تشویشناک حد تک 11.5فیصد جبکہ بھارت میں 4.48فیصد اور بنگلہ دیش میں 5.7فیصد ہے۔ شیری رحمان نے کہاکہ پاکستان میں ہفتہ وار مہنگائی کی شرح 18 فیصد سے زیادہ ہے، تباہی سرکار خود کا کون سی دنیا سے موازنہ کر رہی ہے؟ ۔

شیری رحمن نے کہاکہ روپے کی قدر میں روزانہ رکارڈ کمی معمول بن چکی ہے، اس سے معاشی بدحالی میں اضافہ ہو رہا ہے۔ انہوںنے کہاکہ حکومت کی ناکام معاشی پالیسیوں کی وجہ سے ڈالر اب 178.15 روپے کا ہو چکا ہے، پچھلے 3 سالوں روپے کی قدر میں 55 روپے کمی ہوئی ہے۔ انہوںنے کہاکہ صرف رواں مالی سال ڈالر کے مقابلے میں روپے کی قدر 20 روپے گری ہے، ہر معاشی شعبہ تباہی کے دہانے پر کھڑا ہے، تمام اقتصادی اشارے تنزلی کا شکار ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں