سنکیانگ ویغور

چین کے سنکیانگ میں انسانی حقوق کے احترام بارے اجلاس کا انعقاد

جنیوا (نمائندہ خصوصی) اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کونسل کے 51 ویں اجلاس کے دوران سنکیانگ ویغور خود اختیار علاقے اور اقوام متحدہ کے جنیوا دفتر میں تعینات چینی وفد نے جنیوا میں اقوام متحدہ کے صدر دفتر میں ” چین کے سنکیانگ میں انسانی حقوق کا احترام اور حفاظت کی کامیابی” کے نام سے پروموشن میٹنگ کا مشترکہ انعقاد کیا۔جمعہ کے روز چینی میڈ یا کے مطا بق پچاس سے زائد ممالک کے نمائندے ، اعلیٰ سفارت کاروں ، صحافیوں ، غیرسرکاری تنظیموں کے نمائندوں سمیت 100سے زائد افراد شریک ہوئے ۔

اقوام متحدہ میں تعینات چینی مستقل مندوب چھن شو نے کہا کہ چین کا سنکیانگ ویغور خود اختیار علاقہ ہمیشہ سےعوام کو ترجیج دیتا ہے اور عوام کو خوشحال بنانے کے لیے بھر پور کوشش کرتا ہے۔سنکیانگ میں معاشی و معاشرتی ترقی اور انسانی حقوق کی ترقی کی راہ میں بے مثال کامیابیاں حاصل کی گئیں۔تمام قومیتوں کے لوگ خوشحال زندگی گزاررہے ہیں ، جو پہلے کبھی نہیں تھا۔

بعض مغربی ممالک اپنے سیاسی مقصد کے لیے سنکیانگ میں انسانی حقوق کے شعبوں میں حاصل شدہ کامیابیوں کو نظرانداز کرتے ہوئے جھوٹ پھیلا رہے ہیں۔ یہ ممالک انسانی حقوق کے امور کو سیاسی رنگ دیتے ہیں اورانسانی حقوق کے امور سے وابستہ کثیرالجہتی پلیٹ فارم میں تصادم اور تنازعات پیدا کرنے کی بھر پور کوشش کرتے ہیں۔

شرکا نے سنکیانگ میں انسداد دہشت گردی ، انسداد انتہاپسندی ، ترقی ، غربت کا خاتمہ ، انسانی حقوق کی ترقی اور احترام سمیت شعبوں میں حاصل کردہ کامیابیوں کو خوب سراہا ۔ سنکیانگ کے امور پر چین کے منصفانہ موقف کی حمایت کی اور سنکیانگ کے امور سے استفادہ کرتے ہوئے چین کے داخلی امور میں مداخلت کے اعمال کی سخت مخالفت کی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں